تخلیقِ انسانی کے مراحل قرآن کی روشنی میں


الواقعۃ شمارہ 46 ربیع الاول 1437ھ

از قلم : عبد العظیم جانباز

جس طرح عالمِ آفاق کے جلوے اِجمالاً عالمِ اَنفس میں کار فرما ہیں، اسی طرح نظامِ ربوبیت کے آفاقی مظاہر پوری آب و تاب کے ساتھ حیاتِ انسانی کے اندر جلوہ فرما ہیں۔ انسان کے ” احسن تقویم ” کی شان کے ساتھ منصۂ خلق پر جلوہ گر ہونے سے پہلے اس کی زندگی ایک ارتقائی دَور سے گزری ہے۔ یہی اُس کے کیمیائی اِرتقاء (Chemical evolution) کا دَور ہے، جس میں باری تعالیٰ کے نظامِ ربوبیت کا مطالعہ بجائے خود ایک دلچسپ اور نہایت اہم موضوع ہے، یہ حقائق آج صدیوں کے بعد سائنس کو معلوم ہو رہے ہیں، جب کہ قرآنِ مجید انہیں چودہ سو سال پہلے بیان کر چکا ہے۔

کو پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements