علم کے نام پر بے علمی کی باتیں


الواقعۃ شمارہ : 64-65، رمضان المبارک و شوال المکرم 1438ھ

از قلم : ابو نصر فاروق

الرَّحْمَنُ (۱) عَلَّمَ الْقُرْآنَ (۲) خَلَقَ الْاِنسَانَ (۳) عَلَّمَہُ الْبَیَانَ (۴) (الرحمن: ۱-۴)
"رحمن نے قرآن کی تعلیم دی۔ اُس نے انسان کو پیدا کیا اور اُسے بولنا سکھایا۔”
اقْرَأْ وَرَبُّکَ الْأَکْرَمُ (۳) الَّذِیْ عَلَّمَ بِالْقَلَمِ (۴) عَلَّمَ الْاِنسَانَ مَا لَمْ یَعْلَمْ(۵)(العلق : ۳-۵)
"‘پڑھو اور تمہارا ر ب بڑا کریم ہے، جس نے قلم کے ذریعہ سے علم سکھایا۔انسان کو وہ علم دیا جسے وہ نہ جانتا تھا۔”
اہل دنیا کے پاس حیات و کائنات سے متعلق جتنی معلومات ہیں اُن کا ایک ذریعہ تو اللہ اور اُس کے آخری نبی ﷺ کے اقوال ہیں۔ اور دوسرا ذریعہ انسانوں کا قیاس و گمان اور آدھی ادھوری پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements

دور فتن کی چند نشانیاں


جریدہ "الواقۃ” کراچی، شمارہ 12-13، جمادی الاول، جمادی الثانی 1434ھ/ مارچ، اپریل 2013

نور حدیث

بسلسلۂ نادر احادیث فتن

از قلم: محمدتنزیل الصدیقی الحسینی

2 Daur e Fitan ki Chand Nishanian pdf Download Link

حدیث :  عن أبِی ہریرة ، عنِ النبِیِ ﷺ قال : یتقارب
الزمان و ینقص العمل (یقبض العلم) و یلقی الشح و تظہر الفِتن و یکثر الہرج ۔ قالوا
: یا رسول اللّٰہِ ﷺ أیم ہو ۔ قال : القتل القتل.
ترجمہ
:

سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبیﷺ نے فرمایا: “زمانہ باہم قریب ہوگا ، عمل میں کمی آئے گی ، (علم اٹھالیا جائیگا)، بخل و حرص کی ملاوٹ ہوگی، فتنے ظاہر ہوں گے اور ہرج کی کثرت ہوگی ۔ صحابہ رضی اللہ عنہم نے دریافت کیا : اے اللہ کے رسولﷺ ہرج کیا ہے ؟ فرمایا : قتل ۔”